ضبط کی حد سے ہو کے گزرنا سو جانا

عتیق الہ آبادی

ضبط کی حد سے ہو کے گزرنا سو جانا

عتیق الہ آبادی

MORE BYعتیق الہ آبادی

    ضبط کی حد سے ہو کے گزرنا سو جانا

    رات گئے تک باتیں کرنا سو جانا

    روزانا کی دیواروں سے ٹکرا کر

    ریزہ ریزہ ہو کے بکھرنا سو جانا

    دن بھر ہجر کے زخموں کی مرہم کاری

    رات کو تیرے وصل میں مرنا سو جانا

    مجھ کو یہ آسودہ مزاجی تم نے دی

    سانسوں کی خوشبو سے سنورنا سو جانا

    ہونٹوں پر اک بار سجا کر اپنے ہونٹ

    اس کے بعد نہ باتیں کرنا سو جانا

    اپنی قسمت میں بھی کیا لکھا ہے عتیقؔ

    بانہوں کی وادی میں اترنا سو جانا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY