زخم کھاتے ہیں اور مسکراتے ہیں ہم

اے جی جوش

زخم کھاتے ہیں اور مسکراتے ہیں ہم

اے جی جوش

MORE BYاے جی جوش

    زخم کھاتے ہیں اور مسکراتے ہیں ہم

    حوصلہ اپنا خود آزماتے ہیں ہم

    آ لگا ہے کنارے سفینہ مگر

    شور تو عادتاً ہی مچاتے ہیں ہم

    ہم جو ڈوبیں تو کوئی نہ پھر بچ سکے

    ایسا ساگر میں طوفاں اٹھاتے ہیں ہم

    چور کر بھی چکے دل کے شیشے کو وہ

    اپنی ہمت ہے پھر چوٹ کھاتے ہیں ہم

    بے رخی سے جو دل توڑ دیتے ہیں جوشؔ

    ان کے ہی پیار کے گیت گاتے ہیں ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY