ذرا دھوپ اس سل کو چھو لے میاں

عارج میر

ذرا دھوپ اس سل کو چھو لے میاں

عارج میر

MORE BYعارج میر

    ذرا دھوپ اس سل کو چھو لے میاں

    یہی برف ہو جائے آب رواں

    ہری گھاس جنگل نہیں چھوڑتی

    ہوا شہر کی لاکھ ہو مہرباں

    دھنی روئی صورت اڑے اعتبار

    ردائے تعلق ہوئی دھجیاں

    سمندر مرے یار پتھرا گیا

    کہ ہیں ریت میں دفن بینائیاں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY