ذرا سی بات پہ ہر رسم توڑ آیا تھا

جاں نثاراختر

ذرا سی بات پہ ہر رسم توڑ آیا تھا

جاں نثاراختر

MORE BYجاں نثاراختر

    ذرا سی بات پہ ہر رسم توڑ آیا تھا

    دل تباہ نے بھی کیا مزاج پایا تھا

    گزر گیا ہے کوئی لمحۂ شرر کی طرح

    ابھی تو میں اسے پہچان بھی نہ پایا تھا

    معاف کر نہ سکی میری زندگی مجھ کو

    وہ ایک لمحہ کہ میں تجھ سے تنگ آیا تھا

    شگفتہ پھول سمٹ کر کلی بنے جیسے

    کچھ اس کمال سے تو نے بدن چرایا تھا

    پتا نہیں کہ مرے بعد ان پہ کیا گزری

    میں چند خواب زمانے میں چھوڑ آیا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY