ذرا سی چوٹ لگی تھی کہ چلنا بھول گئے

حسیب سوز

ذرا سی چوٹ لگی تھی کہ چلنا بھول گئے

حسیب سوز

MORE BYحسیب سوز

    ذرا سی چوٹ لگی تھی کہ چلنا بھول گئے

    شریف لوگ تھے گھر سے نکلنا بھول گئے

    تری امید پہ شاید نہ اب کھرے اتریں

    ہم اتنی بار بجھے ہیں کہ جلنا بھول گئے

    تمہیں تو علم تھا بستی کے لوگ کیسے ہیں

    تم اس کے بعد بھی کپڑے بدلنا بھول گئے

    ہمیں تو چاند ستاروں کو رسوا کرنا تھا

    سو جان بوجھ کے اک روز ڈھلنا بھول گئے

    حسیبؔ سوز جو رسی کے پل پہ چلتے تھے

    پڑا وہ وقت کہ سڑکوں پہ چلنا بھول گئے

    مآخذ :
    • کتاب : Dhoop Phir Nikal aai (Pg. 45)
    • Author : Haseeb soz
    • مطبع : Lamhe lamhe Publications, Imam bara Alapur, Badaun (2017)
    • اشاعت : 2017

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY