ظرف سے بڑھ کے ہو اتنا نہیں مانگا جاتا

عباس دانا

ظرف سے بڑھ کے ہو اتنا نہیں مانگا جاتا

عباس دانا

MORE BYعباس دانا

    ظرف سے بڑھ کے ہو اتنا نہیں مانگا جاتا

    پیاس لگتی ہے تو دریا نہیں مانگا جاتا

    چاند جیسی بھی ہو بیٹی کسی مفلسی کی تو

    اونچے گھر والوں سے رشتہ نہیں مانگا جاتا

    دوستی کر کے ہوا سے جو جلا دیں گھر کو

    ان چراغوں سے اجالا نہیں مانگا جاتا

    اپنے کمزور بزرگوں کا سہارا مت لو

    سوکھے پیڑوں سے تو سایہ نہیں مانگا جاتا

    پیٹ بھرتے ہیں جو مانگے ہوئے ٹکڑے کھا کر

    ان کے ہاتھوں سے نوالہ نہیں مانگا جاتا

    بھیک بھی مانگو تو تہذیب کا کاسہ لے کر

    ہاتھ پھیلا کے خزانہ نہیں مانگا جاتا

    ہے عبادت کے لئے شرط عقیدت داناؔ

    بندگی کے لئے سجدہ نہیں مانگا جاتا

    مآخذ:

    • کتاب : Fanoos (Pg. 17)
    • Author : Abbas Dana
    • مطبع : Shahid Book Depot Stedum Road Noor Nagar Rakhyal Ahmdabad (1993)
    • اشاعت : 1993

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY