ذہن میں میرے ابھی کوئی کسک باقی ہے

ہمادری ورما

ذہن میں میرے ابھی کوئی کسک باقی ہے

ہمادری ورما

MORE BYہمادری ورما

    ذہن میں میرے ابھی کوئی کسک باقی ہے

    تجھ سے دوری کی تڑپ آج تلک باقی ہے

    میری آنکھوں میں کہیں تیری چمک باقی ہے

    میری بانہوں میں ترے تن کی لچک باقی ہے

    وہ بہاروں کا ہو موسم یا خزاں کی رت ہو

    پیار کے باغ میں ہر گل کی مہک باقی ہے

    میرے کمرے میں پڑی شیشے کی کرچی میں بھی

    دھندلی دھندلی سی کہیں تیری جھلک باقی ہے

    جتنی رخسار کی لالی میں ہے باقی میرے

    عشق میں میرے ابھی اتنی دہک باقی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے