زیست ملتی ہے عمر فانی سے

نشور واحدی

زیست ملتی ہے عمر فانی سے

نشور واحدی

MORE BYنشور واحدی

    زیست ملتی ہے عمر فانی سے

    مانگ کچھ اپنی زندگانی سے

    اک نظر کا فسانہ ہے دنیا

    سو کہانی ہے اک کہانی سے

    بات کہہ دی تو بات کچھ نہ رہی

    غم ہوا غم کی ترجمانی سے

    صبح ہوتی نہیں محبت کی

    رات کٹتی نہیں جوانی سے

    پھول چنتے ہیں اہل بزم نشورؔ

    میری ہر تازہ گل فشانی سے

    مآخذ:

    • کتاب : Sawad-e-manzil (Pg. 282)
    • Author : Nushoor Wahedi
    • مطبع : Maktaba Jamia Ltd, Delhi (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY