زندگی سے ایک دن موسم خفا ہو جائیں گے

احمد مشتاق

زندگی سے ایک دن موسم خفا ہو جائیں گے

احمد مشتاق

MORE BYاحمد مشتاق

    زندگی سے ایک دن موسم خفا ہو جائیں گے

    رنگ گل اور بوئے گل دونوں ہوا ہو جائیں گے

    آنکھ سے آنسو نکل جائیں گے اور ٹہنی سے پھول

    وقت بدلے گا تو سب قیدی رہا ہو جائیں گے

    پھول سے خوشبو بچھڑ جائے گی سورج سے کرن

    سال سے دن وقت سے لمحے جدا ہو جائیں گے

    کتنے پر امید کتنے خوبصورت ہیں یہ لوگ

    کیا یہ سب بازو یہ سب چہرے فنا ہو جائیں گے

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY