زندگی اپنی ہوئی یار کی فطرت کی طرح

آر پی شوخ

زندگی اپنی ہوئی یار کی فطرت کی طرح

آر پی شوخ

MORE BYآر پی شوخ

    زندگی اپنی ہوئی یار کی فطرت کی طرح

    ہم بھی کل ہوں کہ نہ ہوں اس کی عنایت کی طرح

    وقت ہم کو یہ برے دن نہ دکھاتا اے کاش

    ہم بھی اٹھ جاتے زمانے سے محبت کی طرح

    ہم تو ہر لمحے کو دیتے رہے سانسوں کا حساب

    ہم پہ ٹوٹا ہے ہر اک لمحہ قیامت کی طرح

    گل کھلائے گا یہ مقتول لہو دھرتی پر

    کسی رخسار پہ چڑھتی ہوئی رنگت کی طرح

    لوگ کہتے ہیں نہ کیوں بھول گیا میں اس کو

    وہ کہ تھا جو مری بنیادی ضرورت کی طرح

    زندگی تو کسی ساغر میں ڈھلی تو ہوتی

    ہم تو پی لیتے تجھے جام شہادت کی طرح

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے