زندگی میں پہلے اتنی تو پریشانی نہ تھی

ملک زادہ منظور احمد

زندگی میں پہلے اتنی تو پریشانی نہ تھی

ملک زادہ منظور احمد

MORE BYملک زادہ منظور احمد

    زندگی میں پہلے اتنی تو پریشانی نہ تھی

    تنگ دامنی تھی لیکن چاک دامانی نہ تھی

    جام خالی تھے مگر مے خانہ تو آباد تھا

    چشم ساقی میں تغافل تھا پشیمانی نہ تھی

    غازۂ غم ایک تھا تھے سب کے چہرے مختلف

    غور سے دیکھا تو کوئی شکل انجانی نہ تھی

    جن سفینوں نے کبھی توڑا تھا موجوں کا غرور

    اس جگہ ڈوبے جہاں دریا میں طغیانی نہ تھی

    تجھ سے امید وفا خواب پریشاں تو نہ تھی

    بے وفا عمر گریزاں تھی کہ طولانی نہ تھی

    پڑھ چکا اپنی غزل منظورؔ تو ایسا لگا

    مرثیہ تھا دور حاضر کا غزل خوانی نہ تھی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    RECITATIONS

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    ملک زادہ منظور احمد

    زندگی میں پہلے اتنی تو پریشانی نہ تھی ملک زادہ منظور احمد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY