زندگی نے جھیلے ہیں سب عذاب دنیا کے

پیرزادہ قاسم

زندگی نے جھیلے ہیں سب عذاب دنیا کے

پیرزادہ قاسم

MORE BYپیرزادہ قاسم

    زندگی نے جھیلے ہیں سب عذاب دنیا کے

    بس رہے ہیں آنکھوں میں پھر بھی خواب دنیا کے

    دل بجھے تو تاریکی دور پھر نہیں ہوتی

    لاکھ سر پہ آ پہنچیں آفتاب دنیا کے

    دشت بے نیازی ہے اور میں ہوں اب لوگو

    اس جگہ نہیں آتے باریاب دنیا کے

    زندگی سے گزرا ہوں کتنا بے نیازانہ

    ساتھ ساتھ چلتے تھے انقلاب دنیا کے

    ہم نے دست دنیا پر پھر بھی کی نہیں بیعت

    جانتے تھے ہم تیور ہیں خراب دنیا کے

    RECITATIONS

    پیرزادہ قاسم

    پیرزادہ قاسم

    پیرزادہ قاسم

    زندگی نے جھیلے ہیں سب عذاب دنیا کے پیرزادہ قاسم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY