Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

زندگی آس کی دنیا کا سنور جانا ہے

سوامی شیاما نند سرسوتی روشن

زندگی آس کی دنیا کا سنور جانا ہے

سوامی شیاما نند سرسوتی روشن

MORE BYسوامی شیاما نند سرسوتی روشن

    زندگی آس کی دنیا کا سنور جانا ہے

    موت انسان کے سپنوں کا بکھر جانا ہے

    ہم سے کیا پوچھتے ہو ہم کو کدھر جانا ہے

    ہم تو خوشبو ہیں بہر حال بکھر جانا ہے

    ہم تو خوشبو ہیں بہر حال بکھر جانا ہے

    اور خوشبو کا بکھر جانا سنور جانا ہے

    زندہ رہنا ہے تو مرنے کا سلیقہ سیکھو

    ورنہ مرنے کو تو ہر ویکتی کو مر جانا ہے

    زندگی کیا ہے مسافر کا نرنتر چلنا

    موت چلتے ہوئے راہی کا ٹھہر جانا ہے

    آپ اوروں کے ہنر کو بھی نہیں کہتے ہنر

    ہم نے تو آپ کے عیبوں کو ہنر جانا ہے

    پیار کی راہ میں کانٹیں ہوں کہ شعلے روشنؔ

    ہم گزر جائیں گے ہم کو تو گزر جانا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Hindustani Gazle.n

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے