بہرے کا چندہ

جوشؔ ملیح آبادی

بہرے کا چندہ

جوشؔ ملیح آبادی

MORE BY جوشؔ ملیح آبادی

    حفیظ جالندھری شیخ سر عبدالقادر کی صدارت میں انجمن حمایت اسلام کے لئے چندہ جمع کرنے کی غرض سے اپنی نظم سنارہے تھے ۔

    مرے شیخ ہیں شیخ عبدالقادر

    ہوا ان کی جانب سے فرماں صادر

    نہیں چاہتے ہم سخن کے نوادر

    ہے مطلوب ہم کو نہ گریہ نہ خندہ

    سنا نظم ایسی ملے جس سے چندہ

    جلسے کے اختتام پر منتظم نے بتایا کہ آج کے جلسے میں پونے تین سو روپے چندہ جمع ہوا ہے ۔

    حفیظ جالندھری نے مسکراتے ہوئے کہا۔’’سب ہماری نظم کا اعجاز ہے جناب!‘‘

    ’’لیکن حضور‘‘...منتظم نے بہت متانت سے بتایا۔’’دو سو روپیہ ایک ایسے شخص نے دیا ہے ،جو بہرہ ہے ۔‘‘

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY