ہے آپ کے ہونٹوں پہ جو مسکان وغیرہ

انور مسعود

ہے آپ کے ہونٹوں پہ جو مسکان وغیرہ

انور مسعود

MORE BYانور مسعود

    ہے آپ کے ہونٹوں پہ جو مسکان وغیرہ

    قربان گئے اس پہ دل و جان وغیرہ

    بلی تو یوں ہی مفت میں بدنام ہوئی ہے

    تھیلے میں تو کچھ اور تھا سامان وغیرہ

    بے حرص و غرض قرض ادا کیجیے اپنا

    جس طرح پولس کرتی ہے چالان وغیرہ

    اب ہوش نہیں کوئی کہ بادام کہاں ہے

    اب اپنی ہتھیلی پہ ہیں دندان وغیرہ

    کس ناز سے وہ نظم کو کہہ دیتے ہیں نثری

    جب اس کے خطا ہوتے ہیں اوزان وغیرہ

    جمہوریت اک طرز حکومت ہے کہ جس میں

    گھوڑوں کی طرح بکتے ہیں انسان وغیرہ

    ہر شرٹ کی بوشرٹ بنا ڈالی ہے انورؔ

    یوں چاک کیا ہم نے گریبان وغیرہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY