کل چودھویں کی رات تھی آباد تھا کمرا ترا

دلاور فگار

کل چودھویں کی رات تھی آباد تھا کمرا ترا

دلاور فگار

MORE BYدلاور فگار

    کل چودھویں کی رات تھی آباد تھا کمرا ترا

    ہوتی رہی دن تاک دن بجتا رہا طبلہ ترا

    شوہر شناسا آشنا ہمسایہ عاشق نامہ بر

    حاضر تھا تیری بزم میں ہر چاہنے والا ترا

    عاشق ہیں جتنے دیدہ ور تو سب کا منظور نظر

    نتھا ترا فجا ترا ایرا ترا غیرا ترا

    اک شخص آیا بزم میں جیسے سپاہی رزم میں

    کچھ نے کہا یہ باپ ہے کچھ نے کہا بیٹا ترا

    میں بھی تھا حاضر بزم میں جب تو نے دیکھا ہی نہیں

    میں بھی اٹھا کر چل دیا بالکل نیا جوتا ترا

    یہ مال اک ڈاکے میں کل دونوں نے مل کر لوٹا ہے

    انصاف اب یہ کہتا ہے آدھا مرا آدھا ترا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کل چودھویں کی رات تھی آباد تھا کمرا ترا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY