کسمسانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

عنایت علی خاں

کسمسانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

عنایت علی خاں

MORE BYعنایت علی خاں

    کسمسانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    بلبلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    ایک رقاص نے گا گا کے سنائی یہ خبر

    ناچ گانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    اس سے اندیشۂ فردا کی جوئیں جھڑتی ہیں

    سر کھجانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    اس سے تجدید تمنا کی ہوا آتی ہے

    دم ہلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    اس کے رخسار پہ ہے اور ترے ہونٹ پہ تل

    تلملانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    یہ شریعت کا نہیں گیس کا بل ہے بیگم

    بلبلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی

    مأخذ :
    • کتاب : Muntakhab Shahekar Mazahiya Shayari (Pg. 105)
    • Author : Roohi Kanjahi
    • مطبع : Alhamd Publications (1992)
    • اشاعت : 1992

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY