نکاح کر نہیں سکتی وہ مجھ فقیر کے ساتھ

ظفر کمالی

نکاح کر نہیں سکتی وہ مجھ فقیر کے ساتھ

ظفر کمالی

MORE BYظفر کمالی

    نکاح کر نہیں سکتی وہ مجھ فقیر کے ساتھ

    رکھیل بن کے رہے گی کسی وزیر کے ساتھ

    وہی سلوک زمانے نے میرے ساتھ کیا

    کیا تھا جیسا مشرف نے بے نظیر کے ساتھ

    جو چاہتا ہے لگے پار عشق کا بیڑا

    دعا سلام رکھے حسن کے صفیر کے ساتھ

    تھپک تھپک کے سلایا ہے میں نے مشکل سے

    نہ چھیڑ چھاڑ کرو تم مرے ضمیر کے ساتھ

    جو چاہتا ہے کہ بن جائے وہ بڑا شاعر

    وہ جا کے دوستی گانٹھے کسی مدیر کے ساتھ

    وفور عشق کے جذبے سے ہو گئی سرشار

    نکل پڑی ہے مریدن جدید پیر کے ساتھ

    دلہن کے ساتھ نہ آیا جہیز تو یہ لگا

    کھلائے جیسے کریلا بھی کوئی کھیر کے ساتھ

    وہ پیش پیش تھا جس دم چھڑی تھی جنگ وجود

    صلے کے وقت ظفرؔ ہے صف اخیر کے ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY