تم بھول گئے شاید

انور مسعود

تم بھول گئے شاید

انور مسعود

MORE BYانور مسعود

    وہ جو دودھ شہد کی کھیر تھی

    وہ جو نرم مثل حریر تھی

    وہ جو آملے کا اچار تھا

    تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    جو ہرن کے سیخ کباب تھے

    وہ جواب اپنا جواب تھے

    وہ جو کوئٹہ کا انار تھا

    وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا

    تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    وہ جو سیب زینت باغ تھے

    وہ جو شاخ شاخ چراغ تھے

    وہ جو آلوؤں کو بخار تھا

    وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا

    تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    وہ رقیب کے جو بغیر تھی

    وہ جو چاند رات کی سیر تھی

    وہ جو عہد فصل بہار تھا

    وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا

    مجھے سب ہے یاد ذرا ذرا

    تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY