وہ ایک شخص جو محفل میں بولتا تھا بہت

پاشا رحمان

وہ ایک شخص جو محفل میں بولتا تھا بہت

پاشا رحمان

MORE BYپاشا رحمان

    وہ ایک شخص جو محفل میں بولتا تھا بہت

    سنا ہے اہل نظر سے وہ کھوکھلا تھا بہت

    ردائے شب سے لپٹ کے سواد شام کے بعد

    کسی کے بارے میں پہروں میں سوچتا تھا بہت

    اس اجنبی نے بالآخر پلٹ کے دیکھ لیا

    طلسمی شہر میں کوئی پکارتا تھا بہت

    ابھی جو پاس سے نظریں چرا کے گزرا ہے

    گئی رتوں میں وہی مجھ کو چاہتا تھا بہت

    جو بات بات پہ ہنستا تھا مسکراتا تھا

    کسے خبر کہ وہی دل میں رو رہا تھا بہت

    کچھ ایسے اہل جنوں بھی یہاں سے گزرے تھے

    غبار راہ وفا جن کو ڈھونڈتا تھا بہت

    جو پوچھتے ہو مجھے تم کو یاد ہو شاید

    کوئی نظر سے تمہارے کبھی گرا تھا بہت

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY