آزادی

تری پراری

آزادی

تری پراری

MORE BYتری پراری

    زباں تم کاٹ لو یا پھر لگا دو ہونٹھ پر تالے

    مری آواز پر کوئی بھی پہرہ ہو نہیں سکتا

    مجھے تم بند کر دو تیرگی میں یا سلاخوں میں

    پرندہ سوچ کا لیکن یہ ٹھہرا ہو نہیں سکتا

    اگر تم پھونک کر سورج بجھا دو گے تو سن لو پھر

    جلا کر ذہن یہ اپنا اجالا چھانٹ لوں گا میں

    سیاہی ختم ہوئے گی قلم جب ٹوٹ جائے گا

    تو اپنے خون میں انگلی ڈبا کر سچ لکھوں گا میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY