آنکھیں

فہمیدہ ریاض

آنکھیں

فہمیدہ ریاض

MORE BYفہمیدہ ریاض

    جن پر میرا دل دھڑکا تھا

    وہ سب باتیں دہراتے ہو

    وہ جانے کیسی لڑکی ہے

    تم اب جس کے گھر جاتے ہو

    مجھ سے کہتے تھے

    بن کاجل اچھی لگتی ہیں میری آنکھیں

    تم اب جس کے گھر جاتے ہو

    کیسی ہوں گی اس کی آنکھیں

    تنہائی میں کھوئی کھوئی نازک سپنے بنتی ہوگی

    تم اب جس کے گھر جاتے ہو

    کیا وہ مجھ سے اچھی ہوگی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY