ادھوری موت کا کرب

زاہد امروز

ادھوری موت کا کرب

زاہد امروز

MORE BYزاہد امروز

    اس نے مجھ سے محبت کی

    میں نے اسے اپنا سینہ چھونے کو کہا

    اس نے میرا دل چوم کر

    مجھے امر کر دیا

    میں نے اس سے محبت کی

    اس نے مجھے دل چومنے کو کہا

    میں نے اس کا سینہ چھو کر

    اسے ہدایت بخشی

    ہم دونوں جدا ہو گئے

    جدائی نے ہمارے خواب زہریلے کر دیے

    یک سانسی موت اب ہماری پہلی ترجیح ہے

    تنہائی کا سانپ ہمیں رات بھر ڈستا رہتا ہے

    اور صبح اپنا زہر چوس کر

    اگلی رات ڈسنے کے لیے

    زندہ چھوڑ جاتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY