بندا

مجید امجد

بندا

مجید امجد

MORE BY مجید امجد

    کاش میں تیرے بن گوش میں بندا ہوتا

    رات کو بے خبری میں جو مچل جاتا میں

    تو ترے کان سے چپ چاپ نکل جاتا میں

    صبح کو گرتے تری زلفوں سے جب باسی پھول

    میرے کھو جانے پہ ہوتا ترا دل کتنا ملول

    تو مجھے ڈھونڈھتی کس شوق سے گھبراہٹ میں

    اپنے مہکے ہوئے بستر کی ہر اک سلوٹ میں

    جوں ہی کرتیں تری نرم انگلیاں محسوس مجھے

    ملتا اس گوش کا پھر گوشۂ مانوس مجھے

    کان سے تو مجھے ہرگز نہ اتارا کرتی

    تو کبھی میری جدائی نہ گوارا کرتی

    یوں تری قربت رنگیں کے نشے میں مدہوش

    عمر بھر رہتا مری جاں میں ترا حلقہ بگوش

    کاش میں تیرے بن گوش میں بندا ہوتا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    Bunda - Majeed Amjad نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY