چاند

MORE BYابرار کرتپوری

    چپکے چپکے رات کو تشریف جب لاتا ہے چاند

    ہر طرف دھرتی پہ کیسا نور برساتا ہے چاند

    پہلے دن کے چاند کو سب لوگ کہتے ہیں ہلال

    چودھویں تاریخ ہو تو بدر کہلاتا ہے چاند

    پر سکوں ماحول تارے کہکشاں ٹھنڈی ہوا

    رات کی محفل میں اکثر رقص فرماتا ہے چاند

    جب گھٹا گھنگھور آتی ہے کبھی برسات میں

    اوڑھ کر سپنوں کی چادر شب میں سو جاتا ہے چاند

    کہتی ہے بچہ کو میرا چاند کہتے پیار سے

    استعارہ پیار میں اک ماں کے بن جاتا ہے چاند

    ہر گھڑی بیتاب ہیں ماما کے درشن کے لیے

    چھوٹے بچوں کے دلوں کو خوب بہلاتا ہے چاند

    تم کو بھی بچپن میں اے ابرارؔ کتنا پیار تھا

    جس طرح دانشؔ میاں کو آج کل بھاتا تھا چاند

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY