چاند

MORE BYعلیم اختر

    اجل اجل کومل کومل چمکیلا چمکیلا چاند

    نئی نویلی دلہن جیسا شرمیلا شرمیلا چاند

    وہ دیکھو وہ مسکاتا بل کھاتا لے کر انگڑائی

    اک بادل کی اوٹ سے نکلا چنچل شوخ سجیلا چاند

    اجلی رنگت گورا مکھڑا اس پہ روپہلی ہے پوشاک

    تاروں کے جھرمٹ میں کیسا لگتا ہے بھڑکیلا چاند

    روپ انوپ کی ناؤ پہ بیٹھا کرنوں کی پتوار لئے

    نیل گگن میں تیر رہا ہے سندر چھیل چھبیلا چاند

    ہم بھی چور سپاہی لک چھپ آنکھ مچولی کھلیں گے

    تاروں کے سنگ کھیل رہا ہے اونچا نیچا ٹیلہ چاند

    امی میرا چاند تو دیکھو بالو شاہی جیسا ہے

    نکہت باجی کا ہے کیسا کڑوا اور کسیلا چاند

    کرنوں کی سیڑھی کے سہارے چھت پر تو آ پہنچا ہے

    آنگن میں پانی نہ گراؤ ہو جائے گا گیلا چاند

    چندا ماموں چندا ماموں کہتے کہتے منہ سوکھے

    پھر بھی اپنے پاس نہ آئے ضدی اور ہٹیلا چاند

    منا آغوں آغوں کر کے جب بھی اپنے پاس بلائے

    دھم سے آنگن میں آ کودے اخترؔ رنگ رنگیلا چاند

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY