سرکس

MORE BYمحمد اسد اللہ

    شہر میں سرکس آیا ہے

    کھیل تماشے لایا ہے

    ہاتھی اونٹ اور گھوڑے ہیں

    سب ہی یوں تو بھگوڑے ہیں

    سب کو پکڑ کر لایا ہے

    شہر میں سرکس آیا ہے

    اڑتی اچھلتی کار بھی ہے

    کھیلوں کی بھر مار بھی ہے

    سارے کھلاڑی اور جوکر

    تار پہ چلتے ہیں سرسر

    شہر امڈ کر آیا ہے

    شہر میں سرکس آیا ہے

    شیر بھی ہے اور بکری بھی

    کتوں کی اک ٹولی بھی

    ایک بڑا سا بھالو ہے

    کچھ اس کے ہم جولی بھی

    بھان متی کا کنبہ ہے

    جو سرکس نے جوڑا ہے

    ہاتھی پوجا پاٹھ کرے

    بندر بندر بانٹ کرے

    بھالو ناچ دکھاتا ہے

    طوطا توپ چلاتا ہے

    سبھی دکھاتے ہیں کرتب

    جوکر اب گرا یا تب

    سب کے من کو بھایا ہے

    شہر میں سرکس آیا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY