دسمبر

عبد الرحیم نشتر

دسمبر

عبد الرحیم نشتر

MORE BY عبد الرحیم نشتر

    سردی کھاتے دانت بجاتے آئے دسمبر بابا

    رنگ برنگے اونی کپڑے لائے دسمبر بابا

    صبح سلونی گرم چائے کی پیالی لے کر دوڑی

    کیسا تھر تھر کانپ رہے ہیں ہائے دسمبر بابا

    ان کی داڑھی چاندی جیسی دھوپ پڑے تو چمکے

    لیکن نٹکھٹ لڑکی سا چھپ جائے دسمبر بابا

    دور گگن پر نٹ کھٹ بادل سبھا سجانے بیٹھے

    اجلے اجلے اون کے گولے لائے دسمبر بابا

    صبح سہانی شام سہانی ہر پل نئی کہانی

    مزے مزے کے قصے لے کر آئے دسمبر بابا

    کہیں انگیٹھی کہیں الاؤ ہاتھ تاپتے جاؤ

    موسم دوڑے اور پیچھے رہ جائے دسمبر بابا

    دیواروں پر نئے کلنڈر نئے مناظر ہوں گے

    دوڑی دوڑی آئی جنوری بائے دسمبر بابا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY