دو اجنبی

عادل رضا منصوری

دو اجنبی

عادل رضا منصوری

MORE BY عادل رضا منصوری

    اک پتی کے

    ٹوٹنے گرنے کی آواز سے

    سحر اٹھا ہے

    سہمتا

    پیڑ

    بے تعلق شاخ پر بیٹھی ہے

    چڑیا

    ناک کے نیچے پڑا ہے

    گھونسلہ بکھرا ہوا

    جس کے گرنے اور بکھرنے کی

    صدا سے

    بے خبر ہے

    پیڑ

    مدتوں سے

    وہ ہماری ہی طرح ہیں

    ساتھ ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY