احتیاط

کیفی اعظمی

احتیاط

کیفی اعظمی

MORE BYکیفی اعظمی

    اب تم آغوش تصور میں بھی آیا نہ کرو

    مجھ سے بکھرے ہوئے گیسو نہیں دیکھے جاتے

    سرخ آنکھوں کی قسم کانپتی پلکوں کی قسم

    تھرتھراتے ہوئے آنسو نہیں دیکھے جاتے

    اب تم آغوش تصور میں بھی آیا نہ کرو

    چھوٹ جانے دو جو دامان وفا چھوٹ گیا

    کیوں یہ لغزیدہ خرامی پہ پشیماں نظری

    تم نے توڑا تو نہیں رشتۂ دل ٹوٹ گیا

    اب تم آغوش تصور میں بھی آیا نہ کرو

    میری آہوں سے یہ رخسار نہ کمھلا جائیں

    ڈھونڈتی ہوگی تمہیں رس میں نہائی ہوئی رات

    جاؤ کلیاں نہ کہیں سیج کی مرجھا جائیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    احتیاط نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY