Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ایک نظم

عبدالرشید

ایک نظم

عبدالرشید

MORE BYعبدالرشید

    گاڑی گزر گئی

    دھوئیں اور دھول کی چھتری نے

    مٹی کو ڈھانپ دیا

    کبوتر خوش الحان مؤذن کے

    اعراب جڑے جملوں کے بیچ

    کابک سے سر ٹکراتا ہے

    ٹوٹی میز پہ میں نے آنکھیں رکھی ہیں

    اور گٹھری بن کر

    کرسی پہ بیٹھا ہوں

    میں جو اپنے میلے کفن کی سوندھی خوشبو

    سونگھ چکا ہوں جان گیا ہوں

    اک یا دو فرلانگ فرار کا راستہ ہے

    جینا جیتے رہنا ہی نعمت ہے

    جنگل ہے اور گریے کی شاخوں سے دست سوال

    کاسہ بن کر لٹکا ہے

    میں کاسے میں چھپ کر بیٹھا ہوں

    گھر کا سارا ساز و سامان بیچ کر نکلا ہوں

    یہ سوچ کر گھر سے نکلا ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے