ایک نظم صبح کے انتظار میں

راہی معصوم رضا

ایک نظم صبح کے انتظار میں

راہی معصوم رضا

MORE BYراہی معصوم رضا

    کٹ گئی رات

    مگر

    رات ابھی باقی ہے

    حسرت دید ابھی زندہ ہے

    دل دھڑکتا ہے ابھی

    شوق ملاقات ابھی زندہ ہے

    دل کے صحرائے وفا میں ہے غزالوں کا ہجوم

    اور اس چاند کے پیالے سے چھلکتی ہے مری پیاس ابھی

    زندگی آئی نہیں راس ابھی

    صبح سے پہلی ملاقات ابھی باقی ہے

    کٹ گئی رات

    مگر

    رات ابھی باقی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY