اعتراف

شہریار

اعتراف

شہریار

MORE BYشہریار

    وہ دور بلند پہاڑوں پر

    ملبوس فرشتوں کا پہنے

    خوابوں کے مہیب درختوں کی

    شاخوں پر جھولا ڈالے ہوئے

    پرچھائیاں چھوٹی بڑی لاکھوں

    مصروف ہیں زخم شماری میں

    میں ایک نحیف سے نقطے کی

    بانہوں میں اسیر تڑپتا ہوں

    ہموار زمیں پر چلنے کی

    خواہش کے عذاب میں جلتا ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY