فیصلے کی گھڑی

شہریار

فیصلے کی گھڑی

شہریار

MORE BYشہریار

    بارشیں پھر زمینوں سے ناراض ہیں

    اور سمندر سبھی خشک ہیں

    کھردری سخت بنجر زمینوں میں کیا بوئیے اور کیا کاٹئے

    آنکھ کی اوس کے چند قطروں سے کیا ان زمینوں کو سیراب کر پاؤ گے

    گندم و جو کے خوشوں کی خوشبو تمہارا مقدر نہیں

    آسمانوں سے تم کو رقابت رہی

    اور زمینوں سے تم بے تعلق رہے

    ریڑھ کی ایک ہڈی پہ تم کو بہت ناز تھا

    یہ گماں بھی نہ تھا

    ایک دن بے لہو یہ بھی ہو جائے گی

    فیصلے کی گھڑی آ گئی کچھ کرو

    تتلیوں کے سنہرے ہرے سرخ نیلے پروں کے لیے

    آنکھ کی اوس کے چند قطروں سے بنجر زمیں کے کسی گوشے میں

    پھول پھر سے اگانے کی کوشش کرو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY