ہم گنہ گار عورتیں

کشور ناہید

ہم گنہ گار عورتیں

کشور ناہید

MORE BY کشور ناہید

    یہ ہم گنہ گار عورتیں ہیں

    جو اہل جبہ کی تمکنت سے نہ رعب کھائیں

    نہ جان بیچیں

    نہ سر جھکائیں

    نہ ہاتھ جوڑیں

    یہ ہم گنہ گار عورتیں ہیں

    کہ جن کے جسموں کی فصل بیچیں جو لوگ

    وہ سرفراز ٹھہریں

    نیابت امتیاز ٹھہریں

    وہ داور اہل ساز ٹھہریں

    یہ ہم گنہ گار عورتیں ہیں

    کہ سچ کا پرچم اٹھا کے نکلیں

    تو جھوٹ سے شاہراہیں اٹی ملے ہیں

    ہر ایک دہلیز پہ سزاؤں کی داستانیں رکھی ملے ہیں

    جو بول سکتی تھیں وہ زبانیں کٹی ملے ہیں

    یہ ہم گنہ گار عورتیں ہیں

    کہ اب تعاقب میں رات بھی آئے

    تو یہ آنکھیں نہیں بجھیں گی

    کہ اب جو دیوار گر چکی ہے

    اسے اٹھانے کی ضد نہ کرنا!

    یہ ہم گنہ گار عورتیں ہیں

    جو اہل جبہ کی تمکنت سے نہ رعب کھائیں

    نہ جان بیچیں

    نہ سر جھکائیں نہ ہاتھ جوڑیں!

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    RECITATIONS

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    ہم گنہ گار عورتیں کشور ناہید

    مآخذ:

    • کتاب : kulliyat dusht-e-qais main laila (Pg. 972)

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY