ارادے

MORE BYکیف احمد صدیقی

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند ابھی اک ریت کا میدان ہے لیکن

    کسی دن جا کے ہم اس کو حسیں جنت بنائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند پر اس وقت آبادی نہیں لیکن

    کسی دن ہم وہاں جا کر نئی بستی بسائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند ابھی بد صورت و بد شکل ہے لیکن

    کسی دن ہم اسے دنیا سے بھی دل کش بنائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند پر ہر سمت ہیں جوالا مکھی لیکن

    کسی دن ہم وہاں پر پیار کی کلیاں کھلائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند اندر سے بہت تاریک ہے لیکن

    کسی دن ہم وہاں پر امن کی شمعیں جلائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند پر ہر سمت ہیں ویرانیاں لیکن

    کسی دن ہم وہاں جا کر بہت دھومیں مچائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    یہ مانا چاند پر جانا ابھی بے کار ہے لیکن

    وہ دن بھی آئے گا جب ہم وہاں پکنک منائیں گے

    کسی دن چاند پر ہم لوگ بھی راکٹ سے جائیں گے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY