عید حیران ہے

نجمہ شاہین کھوسہ

عید حیران ہے

نجمہ شاہین کھوسہ

MORE BYنجمہ شاہین کھوسہ

    عید مہندی کا خوشیوں کا

    رنگوں کا خوشبو کا

    اور کانچ کی چوڑیوں کی کھنک

    میں بسی آرزوؤں کا اک نام ہے

    عید انعام ہے

    عید امید ہے

    عید تجدید ہے

    عید جیسے کوئی روشنی کی کرن

    ایک وعدے کہانی فسانے کی یا

    ہجر موسم میں لپٹے ہوئے وصل کے

    دکھ کی تمہید ہے

    عید امید ہے

    ایک گھر میں تو خوشیوں کا سامان ہے

    ایک گھر میں مگر دکھ کا طوفان ہے

    عید حیران ہے

    عید ہیرا نہیں عید موتی نہیں

    عید ہنستی نہیں عید روتی نہیں

    ایک آنگن کہیں کوئی ایسا بھی ہے

    جس میں شہزادی صدیوں سے سوتی نہیں

    شاہزادے کی جب دید ہوتی نہیں

    عید کے دن بھی پھر عید ہوتی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY