اظہار

MORE BYاحمد ندیم قاسمی

    تجھے اظہار محبت سے اگر نفرت ہے

    تو نے ہونٹوں کو لرزنے سے تو روکا ہوتا

    بے نیازی سے مگر کانپتی آواز کے ساتھ

    تو نے گھبرا کے مرا نام نہ پوچھا ہوتا

    تیرے بس میں تھی اگر مشعل جذبات کی لو

    تیرے رخسار میں گلزار نہ بھڑکا ہوتا

    یوں تو مجھ سے ہوئیں صرف آب و ہوا کی باتیں

    اپنے ٹوٹے ہوئے فقروں کو تو پرکھا ہوتا

    یوں ہی بے وجہ ٹھٹکنے کی ضرورت کیا تھی

    دم رخصت میں اگر یاد نہ آیا ہوتا

    تیرا غماز بنا خود ترا انداز خرام

    دل نہ سنبھلا تھا تو قدموں کو سنبھالا ہوتا

    اپنے بدلے مری تصویر نظر آ جاتی

    تو نے اس وقت اگر آئنہ دیکھا ہوتا

    حوصلہ تجھ کو نہ تھا مجھ سے جدا ہونے کا

    ورنہ کاجل تری آنکھوں میں نہ پھیلا ہوتا

    مآخذ:

    • کتاب : Muntakhab Shahkar Nazmon Ka Album) (Pg. 72)
    • Author : Munavvar Jameel
    • مطبع : Haji Haneef Printer Lahore (2000)
    • اشاعت : 2000

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY