جب بارش برستی ہے

دعا علی

جب بارش برستی ہے

دعا علی

MORE BY دعا علی

    تمہاری دید کی خاطر مری آنکھیں ترستی ہیں

    کہ جب بارش برستی ہے

    تمہاری بات کانوں میں عجب رس گھول دیتی ہے

    کہ بارش کے حسیں قطرے مرے رخسار پر آئے

    تمہیں وہ پھول لگتے تھے

    کہا تو نے

    انہیں میں چوم لیتا ہوں

    مری شرم و حیا اس دم بڑی بے باک ہوتی تھی

    کمر میں ہاتھ ڈالے ہم

    بہت ہی دیر تک بھیگے

    کہا میں نے

    تمہاری شربتی آنکھیں

    مجھے مدہوش کرتی ہیں

    تمہارے لمس کا بادل

    مجھے پرجوش کرتا ہے

    تمہارے پیار کی بارش

    بڑی جل تھل سی کرتی ہے

    مجھے پاگل سا کرتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY