کالی ریت

رئیس فروغ

کالی ریت

رئیس فروغ

MORE BYرئیس فروغ

    مٹیالی راتوں کا پانی

    کالے بستروں پر بہتا ہے

    تم نے سمندر کے کنارے بستروں کا خواب دیکھا

    اور اپنے فیصلے میں ظاہر ہو گئیں

    پھر وہ بندر گاہ خالی ہو گئی

    جس پر

    دو شاخیں لہراتی ہیں

    اور ایک پتھر چمکتا ہے

    میں ان بارشوں کو تھمتا ہوا دیکھتا ہوں

    جن کی

    برہنگی میں ہم سمندروں تک جاتے تھے

    اور نیکیاں تلاش کرتے تھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY