کنگن بیلے کا

پروین شاکر

کنگن بیلے کا

پروین شاکر

MORE BYپروین شاکر

    اس نے میرے ہاتھ میں باندھا

    اجلا کنگن بیلے کا

    پہلے پیار سے تھامی کلائی

    بعد اس کے ہولے ہولے پہنایا

    گہنا پھولوں کا

    پھر جھک کر ہاتھ کو چوم لیا

    پھول تو آخر پھول ہی تھے

    مرجھا ہی گئے

    لیکن میری راتیں ان کی خوشبو سے اب تک روشن ہیں

    بانہوں پر وہ لمس ابھی تک تازہ ہے

    شاخ صنوبر پر اک چاند دمکتا ہے

    پھول کا گہنا

    پریم کا کنگن

    پیار کا بندھن

    اب تک میری یاد کے ہاتھ سے لپٹا ہوا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے