کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

بشر نواز

کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

بشر نواز

MORE BYبشر نواز

    کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

    گزرتے وقت کی ہر موج ٹھہر جائے گی

    یہ چاند بیتے زمانوں کا آئنہ ہوگا

    بھٹکتے ابر میں چہرہ کوئی بنا ہوگا

    اداس رہ ہے کوئی داستاں سنائے گی

    کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

    برستا بھیگتا موسم دھواں دھواں ہوگا

    پگھلتی شمع پہ چہرہ کوئی گماں ہوگا

    ہتھیلیوں کی حنا یاد کچھ دلائے گی

    کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

    گلی کے موڑ پہ سونا سا کوئی دروازہ

    ترستی آنکھ میں رستہ کسی کا دیکھے گا

    نگاہ دور تلک جا کے لوٹ آئے گی

    کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY