خواب کی طرح سے یاد ہے

جگن ناتھ آزاد

خواب کی طرح سے یاد ہے

جگن ناتھ آزاد

MORE BYجگن ناتھ آزاد

    خواب کی طرح سے ہے یاد کہ تم آئے تھے

    جس طرح دامن مشرق میں سحر ہوتی ہے

    ذرے ذرے کو تجلی کی خبر ہوتی ہے

    اور جب نور کا سیلاب گزر جاتا ہے

    رات بھر ایک اندھیرے میں بسر ہوتی ہے

    کچھ اسی طرح سے ہے یاد کہ تم آئے تھے

    جیسے گلشن میں دبے پاؤں بہار آتی ہے

    پتی پتی کے لیے لے کے نکھار آتی ہے

    اور پھر وقت وہ آتا ہے کہ ہر موج صبا

    اپنے دامن میں لیے گرد و غبار آتی ہے

    کچھ اسی طرح سے ہے یاد کہ تم آئے تھے

    جس طرح محو سفر ہو کوئی ویرانے میں

    اور رستے میں کہیں کوئی خیاباں آ جائے

    چند لمحوں میں خیاباں کے گزر جانے پر

    سامنے پھر وہی دنیائے بیاباں آ جائے

    کچھ اسی طرح سے ہے یاد کہ تم آئے تھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY