Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کورانہ انگریز پرستی

اسماعیل میرٹھی

کورانہ انگریز پرستی

اسماعیل میرٹھی

MORE BYاسماعیل میرٹھی

    رہا وہ جرگہ جسے چر گئی ہے انگریزی

    سو واں خدا کی ضرورت نہ انبیا درکار

    وہ آنکھ میچ کے بر خود غلط بنے ایسے

    کہ ایشیا کی ہر اک چیز پر پڑی دھتکار

    جو پوششوں میں ہے پوشش تو پس دریدہ کوٹ

    سواریوں میں سواری تو دم کٹا رہوار

    جو اردلی میں ہے کتا تو ہاتھ میں اک بید

    بجاتے جاتے ہیں سیٹی سلگ رہا ہے سگار

    وہ اپنے آپ کو سمجھے ہوئے ہیں جنٹلمین

    اور اپنی قوم کے لوگوں کو جانتے ہیں گنوار

    نہ کچھ ادب ہے نہ اخلاق نے خدا ترسی

    گئے ہیں ان کے خیالات سب سمندر پار

    وہ اپنے زعم میں لبرل ہیں یا ریڈیکل ہیں

    مگر ہیں قوم کے حق میں بصورت اغیار

    نہ انڈیا میں رہے وہ نہ وہ بنے انگلش

    نہ ان کو چرچ میں آنر نہ مسجدوں میں بار

    نہ کوئی علم نہ صنعت نہ کچھ ہنر نہ کمال

    تمام قوم کے سر پر سوار ہے ادبار

    مأخذ:

    intekhab-e-sukhan (Pg. 52)

    • مصنف: Ibne Kanwal
      • اشاعت: 2005-2008
      • ناشر: Kitabi Duniya
      • سن اشاعت: 2005-2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے