لا زوال سکوت

شہریار

لا زوال سکوت

شہریار

MORE BYشہریار

    مہیب لمبے گھنے پیڑوں کی ہری شاخیں

    کبھی کبھی کوئی اشلوک گنگناتی تھیں

    کبھی کبھی کسی پتے کا دل دھڑکتا تھا

    کبھی کبھی کوئی کونپل درود پڑھتی تھی

    کبھی کبھی کوئی جگنو الکھ جگاتا تھا

    کبھی کبھی کوئی طائر ہوا سے لڑتا تھا

    کبھی کبھی کوئی پرچھائیں چیخ پڑتی تھی

    اور اس کے بعد مری آنکھ کھل گئی میں نے

    سرہانے رکھے ہوئے تازہ روز نامے کی

    ہر ایک سطر بڑے غور سے پڑھی لیکن

    خبر کہیں بھی کسی ایسے حادثے کی نہ تھی

    اور اس کے بعد میں دیوانہ وار ہنسنے لگا

    اور اس کے بعد ہر اک سمت لا زوال سکوت

    اور اس کے بعد ہر اک سمت لا زوال سکوت

    مآخذ
    • کتاب : sooraj ko nikalta dekhoon (Pg. 93)
    • Author : shaharyar
    • مطبع : educational book house (2013)
    • اشاعت : 2013

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY