میڈ فار ایچ ادر

علی عمران

میڈ فار ایچ ادر

علی عمران

MORE BYعلی عمران

    تمہیں کچھ خبر ہے

    کہ جب میں نہیں تھا تو تب میں کہاں تھا

    میں اک ماس بن کر کسی سخت گھیرے میں جکڑا ہوا تھا

    میں خونیں اندھیروں میں لتھڑا ہوا تھا

    نہیں جانتا تھا

    کہ میں ہوں کہاں ہوں

    نہیں جانتا تھا

    کہ تم ہو کہاں ہو

    تمہیں کچھ خبر ہے

    کوئی شکل لے کر میں جنما تھا جس دن

    میں جنما نہیں تھا

    کھلی آنکھ سے کتنے چہرے دکھے تھے

    کھلی حبس کے کارن وہ چہرہ نہیں تھا

    تمہیں کچھ خبر ہے

    میں جس لمحے جنما گیا اس جہاں میں

    اذاں میرے کانوں میں ڈالی گئی تھی

    نہ جانے مجھے کیوں سنائی نہ دی تھی

    مگر ایک گمبھیر ڈاڑھی چبھی تھی

    میں رونے لگا تھا

    مجھے وہ اذاں پر سنائی نہ دی تھی

    تمہیں کچھ خبر ہے

    کہ جس لمحے جنمی گئیں تم جہاں میں

    میں تم سے بہت دور دشت گماں میں

    یوں ہی روتے روتے جو ہنسنے لگا تھا

    مری وہ ہنسی کیا وہاں آ رہی تھی

    تمہیں کچھ خبر ہے

    کسی ہاتھ کی ایک ہلکی سی دھپ نے

    رلایا تھا تم کو

    مرے کان میں تب اذاں آ رہی تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY