میں

شہاب جعفری

میں

شہاب جعفری

MORE BY شہاب جعفری

    کس قدر روشن ہیں اب ارض و سما

    نور ہی نور آسماں تا آسماں

    میرے اندر ڈوبتے چڑھتے ہوئے سورج کئی

    جسم میرا روشنی ہی روشنی

    پانو میرے نور کے پاتال میں

    ہاتھ میرے جگمگاتے آسمانوں کو سنبھالے

    سر مرا کاندھوں پہ اک سورج

    کہ نادیدہ خلاؤں سے پرے ابھرا ہوا

    اور زمیں کے روز و شب سے چھوٹ کر

    آگہی کی تیز رو کرنوں پہ میں اڑتا ہوا

    چار جانب اک سہانی تیرگی کی کھوج میں نکلا ہوا

    مآخذ:

    • کتاب : azadi ke bad urdu nazm (Pg. 473)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY