موت

منیر نیازی

موت

منیر نیازی

MORE BY منیر نیازی

    ہر طرف خاموش گلیاں زرد رو گونگے مکیں

    سونے سونے بام و در اور اجڑے اجڑے شہ نشیں

    ممٹیوں پر ایک گہری خامشی سایہ فگن

    رینگ کر چلتی ہوا کی بھی صدا آتی نہیں

    اس سکوت بے کراں میں اک طلسمی نازنیں

    سرخ گہرے سرخ لب اور چاند سی پیلی جبیں

    آنکھ کے مبہم اشارے سے بلاتی ہے مجھے

    ایک پر اسرار عشرت کا خزانہ ہے وہ چشم دلنشیں

    مآخذ:

    • Book: Saveera (Pg. 340)
    • Author: Naziir Chaudhary

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites