نظم

MORE BYصوفی تبسم

    زندگی دور ہوئی جاتی ہے

    اور کچھ میرے قریب آ جاؤ

    جلوۂ حسن کو کچھ اور ضیا ریز کرو

    اپنے سینے سے ابھرنے والے

    آتشیں سانس کی لو تیز کرو

    میری اس پیرئ درماندہ کی

    خشک اور خستہ سی خاکستر افسردہ میں

    سوز غم کو شرر انگیز کرو

    یوں ہی پل بھر ہی سہی

    میرے قریب آ جاؤ

    زندگی دور ہوئی جاتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY