نظم

MORE BYزبیر رضوی

    تم کس سوچ میں ڈوب گئے ہو

    ہاتھ کا پتھر پانی کے سینے پر مارو

    چوٹ تو پانی کو آئے گی

    پانی چوٹ کی تاب نہ لا کر

    موجوں کی صورت میں بہتا

    ساحل ساحل سر پٹکے گا

    پھر خود ہی اصلی حالت پر آ جائے گا

    تم کس سوچ میں ڈوب گئی ہو

    ہاتھ کا پتھر پانی کے سینے پر مارو

    میں پانی ہوں

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY